اکیڈمی کی علمی کاوشیں

 

اکیڈمی نے اپنے ۲۸ سالہ علمی سفر میں علمی و فکری سطح پر نمایاں خدمات انجام دی ہیں، جن میں معاصر فقہی لٹریچر کا اردو ترجمہ، جدید مسائل پر فقہی مناقشہ و مذاکرہ کی مجالس کا انعقاد، فقہی نظریات کا مطالعہ اور غور و فکر کا نیا منہج پیش کرنے کی کوششیں قابل ذکر ہیں، ان علمی کاموں میں فقہی سمیناروں کا انعقاد بھی ہے، چنانچہ اکیڈمی نے مہاراشٹر، گجرات، کرناٹک، تامل ناڈ، آندھرا پردیش، مدھیہ پردیش، راجستھان، بہار، اتر پردیش، دہلی میں اب تک ۲۶ فقہی سمینار منعقد کئے، جن میں مجموعی اعتبار سے تقریباً سمیناروں میں زیر بحث موضوعات۱۲۴ سے زائد موضوعات زیر بحث آئے، جو زندگی کے مختلف شعبوں سے تعلق رکھتے ہیں۔

 

زیر بحث لائے گئے موضوعات

اقتصادی موضوعات:

۱- جدید ذرائع ابلاغ کے ذریعہ عقود و معاملات

۲- کرنسی نوٹ کی شرعی حیثیت

۳- قسط پر خرید و فروخت

۴- عقد مرابحہ کے شرعی اصول

۵- حقوق کی فقہی حیثیت

۶- قبضہ کی حقیقت اور اس سے متعلق احکام

۷- پانی میں رہتے ہوئے مچھلی کی خرید و فروخت

۸- شیئرز  اور ان کی خرید و فروخت

۹-     کمپنیوں کے شیئرز

۱۰-      پگڑی کی شرعی حیثیت

۱۱- بینک انٹرسٹ کی حقیقت اور اس کا مصرف

۱۲- تجارتی سود

۱۳- ہندوستان کے پس منظر میںانشورنس کا حکم

۱۴- دو ملکوں کی کرنسیوں کا ادھار تبادلہ

۱۵-  سود کی حقیقت

۱۶- اسلامی مالیاتی ادارے

۱۷- اسلامی بنکاری

۱۸- غیر سودی امدادی سوسائٹیاں

۱۹- غیر سودی بینکنگ

۲۰- بینک سے جاری ہونے والے مختلف کارڈکے شرعی احکام

۲۱- نیٹ ورک مارکٹنگ کی مختلف شکلیں

۲۲- اعلیٰ تعلیم کے لئے تعلیمی قرض لینے کا حکم

۲۳- خواتین کی ملازمت

۲۴- موجودہ کرنسی کی شرعی حیثیت

۲۵- تورق کا اور اسلامی بنکوں کا مروجہ طریقہ کار

۲۶- کاروبار میں والد کے ساتھ اولاد کی شرکت

۲۷- مختلف النوع ملازمتیں

۲۸۔ بیع وفاء

۲۹۔ بیع صکوک

۳۰- اسلامی تکافل

۳۱-   ہبہ سے متعلق مسائل

۳۲- عقد استصناع سے متعلق مسائل

۳۳- سرکاری اسکیموں سے متعلق مسائل

۳۴- زمینوں کی خرید و فروخت سے متعلق بعض مسائل

۳۵- سونا چاندی کی تجارت سے متعلق مسائل

طبی موضوعات:

۱- طبی اخلاقیات

۲- ضبط ولادت

۳- اعضاء کی پیوند کاری

۴- ایڈز

۵- کلوننگ

۶- جلاٹین

۷- الکحل

۸- میڈیکل انشورنس

۹- جنیٹک سائنس

۱۰- ڈی این اے ٹسٹ

۱۱- دماغی موت

۱۲- یوتھنیزیا

۱۳- پلاسٹک سرجری

۱۴۔   اعضاء واجزاء انسانی کا عطیہ

۱۵۔ غذائی مصنوعات میں حلال وحرام کے اصول

 سماجی موضوعات :

۱- نکاح  میں لڑکی ،لڑکے اور اولیاء کے اختیارات

۲- فون،ویڈیوکانفرنسنگ اورانٹر نیٹ کے ذریعہ نکاح

۳- جبری نکاح کا شرعی حکم

۴- نکاح میں کفاء ت

۵- عقد نکاح میںشرائط کی فقہی حیثیت

۶- مہر کا شرعی حکم

۷- مطالبہ جہیز شریعت کی نظر میں

۸- حالت نشہ میں دی ہوئی طلاق کا حکم

۹- خواتین کی میراث

۱۰- غیر مسلم ممالک میں آباد مسلمانوں کے کچھ اہم مسائل

۱۱- تعلیم گاہوں میں جنسی تعلیم

۱۲- قیدیوں کے حقوق

۱۳- غیر مسلم ممالک میں عدالت کے ذریعہ طلاق

۱۴- مشترکہ و جداگانہ خاندانی نظام

۱۵- آبی وسائل اور ان کے شرعی احکام

۱۶- شقاق بین الزوجین

۱۷- نشہ آور اشیاء

۱۸۔ الیکشن سے متعلق چند مسائل

۱۹- میراث و وصیت سے متعلق مسائل

۲۰۔  اسلام میں بچوں کے حقوق

۲۱- اہل کتاب سے متعلق مسائل و احکام

۲۲۔  اسلام میں معذوروں اور بوڑھوں کے حقوق

۲۳۔  طلاق غضبان

 جدید آلات و ذرائع:

۱- انٹرنیٹ اور جدید ذرائع ابلاغ کا استعمال

۲-  ذبح کے مسائل

۳- مشینی ذبیحہ کا حکم

اصولی موضوعات:

۱- فقہی اختلاف کی شرعی حیثیت

۲- ضعیف احادیث کے احکام

۳- شریعت میں ضرورت وحاجت کی رعایت اور اس کے حدود

۴- شریعت میں عرف و عادت کا اعتبار اور اس کے اصول و قواعد

۵- غذائی مصنوعات میں حلال و حرام کے اصول

۶- حلال سرٹیفکٹ کا اجراء کے اصول و معیارات

۷- وحدت امت - اصول و آداب

عباداتی موضوعات:

۱- انقلاب ماہیت اور طہارت و نجاست وحلت و حرمت پر اس کا اثر

۲- مسجد کی شرعی حیثیت

۳- حج و عمرہ کے نئے مسائل

۴-  اوقاف سے متعلق جدید مسائل

۵- زکاۃ میں بنیادی حاجت

۶- دَین(قرض)کی زکاۃ

۷- تجارت میں پیشگی دی ہوئی قیمت اور کرایہ دوکان و مکان میں دی گئی ڈپوزٹ کی رقم پر زکوۃ

۸- ہیرے و جواہرات پر زکاۃ

۹- پراویڈنٹ فنڈ پر زکاۃ

۱۰- مدرسہ  کے سفرا، محصلین اور مہتمم کی حیثیت

۱۱- اموال مدرسہ پرزکاۃ

۱۲- کمیشن پر زکاۃ کی وصولی

۱۳ - مال حرام کی زکاۃ

۱۴- اموال زکاۃ کی سرمایہ کاری

۱۵- فی سبیل اللہ سے کیا مراد ہے؟

۱۶- ہندوستان میں عشری و خراجی اراضی

۱۷- ادائیگی خراج کا طریقہ اور خراج سے سرکاری محصول کی منہائی

۱۸- زمینی پیداوار، درخت و سبزیوں پر عشر

۱۹- مزارعت(بٹائی) والی کاشت پر عشر

۲۰- عشرسے اخراجات زراعت کی منہائی

۲۱- مکھانہ، مچھلی و ریشم پر عشر

۲۲- مکان، چھت، گردوپیش کی افتادہ اراضی اور اراضی اوقاف پر عشر

۲۳- سماجی مسائل کے حل کے لئے نئے اوقاف کا قیام

۲۴- رمی جمار کے اوقات اور قیام منیٰ کا حکم

۲۵- روزہ میں جدید طریقہ علاج کا استعمال

۲۶- مسافت سفر کا آغاز

۲۷- جائے ملازمت کا حکم

۲۸- ایام قربانی میں کس مقام کا اعتبار ہے؟

۲۹۔ قرآن مجید کے متن وترجمہ کی کتاب واشاعت سے متعلق بعض مسائل

متفرق موضوعات:

۱- اعلامیہ برائے اتحاد امت

۲- دینی و عصری اداروں کے طلبہ

۳- وظیفہ طلبہ

۴- اسلام اور امن عالم

۵- ماحولیات کا تحفظ

۶- تفریح وسیاحت-اس کے احکام و شرعی ضوابط

۷- تجویز بہ سلسلہ تحفظ خواتین

۸- شہریت سے متعلق مسائل

۹- رحم کو کرایہ یا عاریت پر دینا

۱۰- اعلامیہ برائے تعلیم اور تعلیمی اداروں کی فرقہ واریت سے حفاظت

۱۱- بین مذہبی مذاکرات-اصول وآداب

۱۲- فضائی و صوتی آلودگی کا مسئلہ

 

فقہی مجلات کی کتابی صورت میں طباعت واشاعت:

اکیڈمی مختلف فقہی سمیناروں کے مقالات کو کتابی شکل میں شائع کرنے کا اہتمام کرتی رہی ہے، اکیڈمی نے تمام ‘‘مجلات’’ کی دوبارہ ایڈیٹنگ کے بعد از سرنو ان کو مستقل کتاب کی صورت میں اشاعت کا کام انجام دیا، اب تک تمام مجلات کتابی صورت میں طبع ہوچکے ہیں، اور اب یہ کوشش کی جار ہی ہے کہ تمام مجلات کے نئے ایڈیشن دوبارہ شائع کیے جائیں، چنانچہ اس پورے ذخیرہ کی اشاعت وطباعت کا عمل جاری ہے۔

اکیڈمی کی مطبوعات میں ایک اہم کتاب حضرت مولانا مفتی نظام الدین اعظمیؒ(سابق صدر مفتی دارالعلوم دیوبند) کی ‘‘منتخبات نظام الفتاوی’’  تین جلدوں میں شائع ہوچکی ہے۔

اکیڈمی کے فیصلے اردو ،عربی، انگریزی اور مختلف دوسری زبانوں میں شائع ہوتے رہے ہیں ، لوگوں کی آسانی کے لئے ان فیصلوں کو  ‘‘نئے مسائل اور اسلامک فقہ اکیڈمی کے فیصلے’’ کے عنوان سے مرتب کر کے مسلسل شائع اور تقسیم کیا جاتا ہے۔

 

فقہی مخطوطات کی تحقیق و اشاعت:

اکیڈمی نے مخطوطات کے علمی ذخیرہ کو بھی تحقیق کے بعد منظر عام پر لانے کی کوشش کی، چنانچہ حضرت مولانا قاضی مجاہد الاسلام قاسمیؒ کی تحقیق کے ساتھ علامہ محمد بن اسماعیل اشفور قانی کی ‘‘صنوان القضاء و عنوان الافتاء’’ چار جلدوں میں کویت سے نیزعلامہ ظہیر الدین مرغینانی کے مخطوطہ ‘‘مختارات النوازل’’ مولانا خالد سیف اللہ رحمانی کی تحقیق کے ساتھ چار جلدوںمیں شائع ہوچکی ہے۔